سورج کی روشنی میں میری اک سوچ

The Way I Think

موسی نے کہا کہ اگر تم سب اور روۓ زمین کے تمام انسان اللہ کی نا شکری کریں تو بھی اللہ بے نیاز اور تعریفوں والا ہے۔۔۔

اس آیات کو پڑھ کے میرے ذہن میں سورج کی آب و تاب اور روشنی کی مثال آئی، کہ بالفرص اگر ایک انسان آٹھ کھڑا ہو اور سورج کی طرف منہ کر کے تھوکے تو سورج کی روشنی کو کوئی فرق نہ پڑے،چلو اگر انسانوں کا گروپ مل کے کریں تو بھی نہیں، حتی کہ اگر تمام کے تمام انسان مل کے بھی تھوکے تو بھی روشنی کم نہ ہو سکے گئی۔۔

انسان کی یہ حد ہے کہ وہ اللہ کی تخلیق کردہ چیز سورج کے آگے بے بس ہے تو اللہ کی ذات تو اسکے بہت بالاتر ہے اور اعلی ہے۔۔
پتہ نہیں سورج کی طرف منہ کر کے تھوکنے والا انسان کس کو دھوکہ دیتا ہے۔
سورج کو یا خود کو

View original post 7 more words

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s